پیپلز پارٹی کی مرکزی قیادت اور تحصیل صدر کے اصرار پر ضلعی صدر پیپلز لیبر بیورو محمد صدیق بھلر نے پارٹی چھوڑنے کا فیصلہ واپس لے لیا

بورے والااپڈیٹس نیوز(چوہدری اصغر علی جاوید سے)پیپلز پارٹی کی مرکزی قیادت اور تحصیل صدر کے اصرار پر ضلعی صدر پیپلز لیبر بیورو محمد صدیق بھلر نے پارٹی چھوڑنے کا فیصلہ واپس لے لیا،صدیق بھلر کے فیصلہ پر کارکنوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی،پیپلز پارٹی کے دفاتر میں مٹھائیاں تقسیم،تفصیلات کے مطابق پیپلز پارٹی کے درینہ ساتھی اور پیپلز لیبر بیورو ضلع وہاڑی کے صدر محمد صدیق بھلر نے گذشتہ ماہ پارٹی کے چند راہنماﺅں سے اختلافات کے باعث پارٹی کے عہدہ اور رکنیت سے استعفیٰ دے دیا تھا جس BUREWALA PHOTO 1-03092015پر پارٹی قیادت نے اُن سے رابطہ قائم کرکے تحصیل صدر کو ہدایت جاری کی تھی کہ وہ محمدصدیق بھلر کے تحفظات دور کروائیں اور انہیں اپنا فیصلہ واپس لینے پر مجبور کریں جس پر گذشتہ روز محمد صدیق بھلر نے پارٹی قیادت کی ہدایت اور احسن سردار بھٹی کے اصرار پر اپنا فیصلہ واپس لیتے ہوئے دوبارہ پارٹی میں شمولیت کا اعلان کر دیا اُن کے اس اعلان پر پیپلز پارٹی تحصیل بورے والا کے صدر احسن سردار بھٹی کے دفتر میں کارکنوں نے خوشی سے جشن منایا اور کارکنان میں مٹھائیاں تقسیم کی گئیں پارٹی عہدیداران و کارکنان کیپٹن(ر)محمد اسماعیل،غلام مرتضیٰ چوہان،محمد سلیم قریشی،راﺅ فریاد علی خاں،محمد حفیظ طور،مقصود احمد ساجد،غلام حیدر جٹ،چوہدری عبدالستار،بابا محمد یعقوب لنگا،مہر محمد وسیم،باﺅ محمد رمضان،محمود احمد بھٹی،فاروق طارق اور دیگر پارٹی کارکنان نے تحصیل آفس میں منعقدہ تقریب کے دوران محمد صدیق بھلر کو پارٹی میں واپس کے فیصلہ کا خیر مقدم کیا۔

ایف آئی اے کی جانب سے جعلی مصالحہ جات اور ملاوٹ مافیا کے خلاف کاروائی قابل تحسین ہے ۔ چوہدری نذیر ، چوہدری ارشاد

بورے والااپڈیٹس نیوز(چوہدری اصغر علی جاوید سے)رکن قومی اسمبلی چوہدری نذیر احمد آرائیں اور رکن پنجاب اسمبلی چوہدری ارشاد احمد آرائیں نے کہاہے کہ ایف آئی اے اور مقامی تحصیل انتظامیہ کی جانب سے جعلی مصالحہ جات اور ملاوٹ مافیا کے خلاف کاروائی قابل تحسین ہے خادم اعلیٰ پنجاب کی صوبے بھر میں ملاوٹ مافیا کے خاتمہ کیلئے چلائی جانیوالی اس خصوصی مہم کو کامیابی سے ہمکنار کرنے کے لیے عوام کو بھرپور تعاون کرنا چاہتے ہیں تاکہ پنجاب کو ملاوٹ شدہ اشیاءسے پاک صوبہ بنا کر آئندہ آنے والی نسلوں کا مستقبل محفوظ بنایا جا سکے مضر صحت اور ملاوٹ شدہ اشیاءفروخت کرنے والے انسانیت کے دشمن ہیں اور ایسے عناصر کے خلاف سرکاری مشینری کو فری ہینڈ دیا گیا ہے جس میں کسی قسم کی سفارش یا دباﺅ ہرگز قبول نہیں کیا جائے گا،ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دفتر میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ انسانی جانوں سے کھیلنے والے معاشرے کے ناسوروں کا خاتمہ حکومت کی اولین ترجیح ہے نیشنل ایکشن پلان کی طرح خادم اعلیٰ پنجاب کا ملاوٹ مافیا کے خلاف پلان بھی کامیابی سے ہمکنار ہو گا مسلم لیگی کارکنان اور ہر ذمہ دار شہری اپنے ارگرد ہونے والے ایسے مکروہ دھندے کی نشاندہی کرکے اپنی قومی ذمہ داری پوری کرنے میں اپنا کردار ادا کریں۔

بلدیاتی الیکشن اور سیاسی جماعتوں میں انتشار

تحریر :۔اصغر علی جاوید

بلدیاتی الیکشن کے شیڈول کا اعلان ہونے کے بعد سیاسی سرگرمیوں میں تیزی آ گئی ہے امیدواروں نے ٹکٹوں کے حصول کے لیے سیاسی ڈیروں کی رونقیں بڑھانا شروع کر دی ہیں اس وقت بلدیاتی الیکشن کی تیاریوں کے حوالہ سے دونوں بڑی سیاسی جماعتیں مسلم لیگ(ن)اور تحریک انصاف میں اندرونی اختلافات کی وجہ سے کارکنان اضطراب کا شکار ہو چکے ہیں حکمران جماعت مسلم لیگ(ن)کا اگر ذکر کیاجائے تو اسکے بھی بورے والا بلکہ ضلع وہاڑی میں دو واضح گروپ ایکدوسرے کے خلاف صف آراہیں تحصیل بورے والا میں مسلم لیگ(ن)کے ایک دھڑے کی قیادت رکن قومی اسمبلی چوہدری نذیر احمد آرائیں اور ممبر صوبائی اسمبلی چوہدری ارشاد احمد آرائیں کر رہے ہیں جنکے ساتھ حلقہ پی پی 232سے سابق صوبائی وزیر پیر غلام محیی الدین چشتی بھی شامل ہیں یہ گروپ میونسپل کمیٹی کے36وارڈز اور یونین کونسل کی سطح پر اپنے امیدواروں کو حتمی شکل دینے میں مصروف ہے جبکہ دوسری جانب سابق وزیر مملکت مملکت بزرگ لیگی راہنما سید شاہد مہدی نسیم کی قیادت میں رکن قومی اسمبلی سید ساجد مہدی سلیم اور رکن صوبائی اسمبلی پی پی 232چوہدری محمد یوسف کسیلیہ بھی اپنے من پسند افراد کو بلدیاتی الیکشن میں ٹکٹ دلوا بلدیاتی الیکشن اور سیاسی جماعتوں میں انتشارکر کامیابی کی پوری کوشش کریں گے ضلعی صدر میاںمحمد عمران دولتانہ اور مقامی ارکان اسمبلی چوہدری نذیر احمد آرائیں اور چوہدری ارشاد احمد آرائیں کے مابین رابطے کا فقدان اور ضلعی صدر کی جانب سے بغیر کسی مشاورت کے عہدیداران و مختلف ذیلی تنظیموں کے عہدیداروں کا اعلان کرنا پارٹی کے درینہ کارکنان اور قربانیاں دینے والے کارکنوں کے لیے تشویش کا باعث بن چکا ہے ضلعی صدر مسلم لیگ(ن)میاں عمران دولتانہ جو کہ تہمینہ دولتانہ کے صاحبزادے ہیں وہ بورے والا میں آکر مقامی سٹی تنظیم،یوتھ ونگ اور دیگر ذیلی تنظیموں کے ساتھ ساتھ ارکان اسمبلی کو اعتماد میں لیئے بغیر جن عہدیداروں کا اعلان کر رہے ہیں انہیں سٹی تنظیم،مسلم لیگ(ن)یوتھ ونگ،لیبر ونگ،خواتین ونگ اور تاجر ونگ نے بھی مسترد کر دیا ہے جس کے بعد ان دو دھڑوں کے مابین اختلافات کھل کر سامنے آ گئے ہیں جو کہ بلدیاتی الیکشن میں(ن)لیگ کو اہم فیصلوں میں مشکلات سے دوچار کر سکتے ہیں ضلعی صدر کا جھکاﺅ تحصیل صدر چوہدری محمد یوسف کسیلیہ اورسابق ایم پی اے ڈاکٹر نذیر احمد مٹھو ڈوگر(مرحوم)کے سیاسی جانشین سردار عقیل احمد شانی ڈوگر گروپ کی طرف ہے اور وہ یہ سمجھتے ہیں کہ ان دو دھڑوںکے ساتھ پارٹی کی خاطر قربانیاں دینے والے ہی حقیقی ورکرز ہیں لیکن چوہدری نذیر احمد آرائیں کی قیادت میں مسلم لیگ (ن) کے ”اتحاد گروپ“کے وہ لوگ جن میں بزرگ لیگی راہنما غلام رسول زیدی،ضلعی صدر مسلم لیگ(ن)یوتھ ونگ منظور برکت ماڑی والا،سنیئر راہنما اے غفار پاشا،ڈاکٹر محمد سرور اور دیگر پارٹی ورکرز کا خیال ہے کہ2013کے الیکشن میں جن لوگوں نے پارٹی کے نامزد امیدواروں کی کھلم کھلا مخالفت کی تھی وہ آج پارٹی سے مخلص کیسے ہو سکتے ہیں اور ایسے لوگوں کو پارٹی کے ورکرز ہرگز قبول نہیں کریں گے اگر ضلعی صدر نے اپنے مرضی کے فیصلے مسلط کرنے کی کوشش کی تو پارٹی کارکنان اُن کے فیصلوں کے خلاف ہر سطح پر آواز اُٹھائیں گے دوسری جانب پارٹی میںموجود دونوں دھڑوں کے قائدین بلدیاتی الیکشن میں بھی بالواسطہ اوربلا واسطہ ایک د وسرے کی مخالفت میں ہر حربہ استعمال کرنے کی کوشش کریں گے جس سے کئی حلقوں میں مسلم لیگ(ن)بمقابلہ مسلم لیگ(ن)ہو سکتا ہے اگر پارٹی قیادت نے اس بات کا ادراک نہ کیا تو پارٹی کو آنے والے دنوں میں مزید مشکلات سے دوچار ہونا پڑ سکتا ہے حکمران جماعت کی طرح ملک کی دوسری بڑی سیاسی پارٹی پاکستان تحریک انصاف میں بھی حالات(ن)لیگ سے کچھ مختلف نہیں پی ٹی آئی میں مقامی طور پر بظاہر دو بڑے گروپ نظر آ رہے ہیں جن میں ایک گروپ سابق ٹکٹ ہولڈرز ریاست علی بھٹی اور حاجی محمد شہباز ڈوگر کی قیادت میں سرگرم ہے اور پارٹی میں نئے شامل ہونے والی دو شخصیات چوہدری ساجد شریف آرائیں اور غلام مصطفےٰ بھٹی کی شمولیت کے بعد ریاست علی بھٹی گروپ نے بھی اپنی سرگرمیاں تیز کر دی ہیں جس سے بلاشبہ پی ٹی آئی کے مایوس کارکنان بھی دوبارہ متحرک ہو گئے ہیں چوہدری ساجد شریف آرائیں جو کہ سابق امیدوار صوبائی اسمبلی حاجی شہباز احمد ڈوگر کے ذریعہ پارٹی میں شامل ہوئے تھے اور انکی حاجی شہباز کے ذریعہ شمولیت پر ریاست علی بھٹی کو کچھ تحفظات تھے 2013کے الیکشن کے بعد سے لیکر حاجی ساجد شریف کی پارٹی میں شمولیت تک حاجی شہباز ڈوگر اور ریاست علی بھٹی کے مابین بھی بظاہر کوئی کوارڈینیشن نظر نہیں آرہی تھی جسکی وجہ سے بورے والامیں پی ٹی آئی کی مقامی قیادت کا ورکرز کے ساتھ رابطہ اور سرگرمیاں نہ ہونے کے برابر رہیں اور پارٹی ورکرز کی طرح متعدد راہنما بھی خاموش رہے ساجد شریف آرائیں جو کہ خود کو ایک غیر متنازعہ اور نیوٹرل سمجھ کر پارٹی کو مذید تقویت دینے اور اسے منظم بنانے کا عزم لے کر آئے اُن سے حاجی شہباز احمد ڈوگر نے ریاست علی بھٹی سے رابطوں کی وجہ سے غیر محسوس انداز میں ناراضگی کا تاثر دینا شروع کر دیا اور خود ریاست علی بھٹی سے براہ راست منقطع رابطوں کا سلسلہ دوبارہ جوڑ لیا اس دوران حاجی شہباز احمد ڈوگر کے ڈیرہ پر ہونے والی ایک تقریب میں بھی انہوں نے حاجی ساجد شریف کو مدعو نہ کر کے اپنی ناراضگی پر مہر ثبت کر دی جس کے بعد دونوں ٹکٹ ہولڈرز راہنماﺅںکی جانب سے ساجد شریف کے ساتھ پارٹی معاملات میں کوئی کوارڈینیشن دیکھنے کو نہ ملی جس سے ساجد شریف جو کہ پارٹی میں ایک جواں عزم اور ولولہ لے کر آئے تھے انہیں دونوں کے اس طرز عمل سے تکلیف ہوئی اور انہوں نے اپنے رابطے براہ راست ورکرز اور پارٹی قیادت سے استوار کرنے کے لیے اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار لانا شروع کر دیا عمران خان کی وہاڑی میں کسان کنونش میں آمد پر ضلعی آرگنائزر طاہر انور واہلہ اور ریاست علی بھٹی کے اختلافات بھی سامنے آگئے ریاست علی بھٹی اور طاہر انور واہلہ کے مابین اختلافات کسان کنونشن کے موقع پر اور اُسکے بعد بھی آج تک برقرار ہیں بلکہ پی ٹی آئی کے دیرینہ کارکن ہونے کے ایک دعویدار نے تو طاہر انور واہلہ کو ضلعی آرگنائزر تسلیم کرنے سے بھی انکار کردیا اور وہ ہر جگہ انکی مخالفت میں پیش پیش نظر آرہے ہیںحاجی شہباز احمد ڈوگر اور حاجی ساجد شریف کے مابین تناﺅ کی کیفیت پیدا کرنے میں حاجی شہباز احمد ڈوگر کے چند مخلص مگر نا عاقبت اندیش دوستوں کی جانب سے پیدا کردہ غلط فہمیاں ہیں او ر انکے یہ دوست پارٹی کے بنیادی کارکنان ہونے کے دعویدار تو ضرور ہیں مگر وہ بورے والا میں پارٹی کی بنیاد مضبوط کرنے میں کردار ادا نہیں کررہے بلکہ پارٹی میں گروپ بندی کو اپنی کامیابی تصور کر رہے ہیںجن کا ادراک حاجی شہباز احمد کو کرنا ہو گا پی ٹی آئی حلقہ پی پی235سے سابق ٹکٹ ہولڈر چوہدری خالد محمود چوہان اور اُنکے والد سابق ایم این اے چوہدری قربان علی چوہان نے بھی کسان کنونشن میں اپنے ورکرز کے ہمراہ بھرپور شرکت کی چونکہ انہوںنے مستقبل کے حوالہ سے اپنی تمام تر سیاسی سرگرمیوں کا مرکز بورے والا کو بنا لیا ہے جسکے لئے انہوں نے منصوبہ بندی بھی کر رکھی تھی اس لیے ریاست علی بھٹی اور انکے مابین اسحاق خاں خاکوانی کے ڈیرہ پر عمران خان کے سامنے سیاسی کشیدگی کی فضا پیدا ہو گئی اور بعد ازاں ریاست علی بھٹی اور خالد محمود چوہان کے مابین ایک ناخوشگو ار واقعہ پیش آنے سے بورے والا کی سطح پرپی ٹی آئی کے ان دو دھڑوں کے مابین سیاسی کشیدگی بڑھ گئی پارٹی میں نئے شامل ہونے والے سابق تحصیل نائب ناظم غلام مصطفےٰ بھٹی بھی پارٹی میں ہونے والی اس بدمزدگی اور کشیدہ سیاسی صورتحال سے بہت مایوس دکھائی دے رہے ہیںلیکن وہ اپنے طور پر اپنا سیاسی وجود برقرار رکھنے کے لئے عوامی رابطہ مہم جاری رکھے ہوئے ہیں اُدھر انصاف یوتھ ونگ کے صوبائی نائب صدر امجد حمید چوہان اور ریاست علی بھٹی کے مابین بھی اختلافات نوجوان ورکرز کے لیے تشویش کا باعث بنے ہوئے ہیں جوآئندہ بلدیاتی الیکشن میں شدید نقصان کا باعث بن سکتے ہیں پارٹی راہنماﺅں میں پائے جانے والے اختلافات کو ختم کروانے کے لئے ابھی تک پارٹی قیادت نے کوئی سنجیدہ اور نتیجہ خیز کوشش نہیں کی جس سے پارٹی بدستور اندرونی خلفشار کا شکار ہے اب موجودہ صورتحال میں اگر پارٹی کی مرکزی یا صوبائی قیادت نے کوئی ٹھوس اور اصولی فیصلے نہ کیے تو پی ٹی آئی بھی(ن)لیگ کی طرح دھڑوں میں بٹ کر بلدیاتی انتخابات میں مطلوبہ نتائج حاصل نہیں کر پائے گی آئندہ آنے والے دنوں میں دونوں بڑی سیاسی جماعتوں کی قیادت نے اگر اختلافات اور دھڑے بندیوں کا خاتمہ نہ کیا تو دونوں جانب سے کارکنان میں پائی جانے والی بے چینی کا خاتمہ ممکن نہیں ہو سکے گا۔

بلدیاتی الیکشن کے لئے امیدواروں کو میرٹ پر ٹکٹ تقسیم کئے جائیں گے ۔ اسحاق خاں ، طاہر واہلہ

بورے والااپڈیٹس نیوز(چوہدری اصغر علی جاوید سے)پی ٹی آئی کے مرکزی راہنمااسحاق خاں خاکوانی نے کہا ہے کہ بلدیاتی الیکشن کے لئے امیدواروں کو میرٹ پر ٹکٹ تقسیم کئے جائیں گے اچھی شہرت کے حامل،پڑھے لکھے اور نظریاتی کارکنان کو ہرگز نظر انداز نہیں کیا جائے گا پارٹی ٹکٹوں کی تقسیم کے حوالے سے درخواستوں کی وصولی سابق ٹکٹ ہولڈرز کے علاوہ پارٹی کے تمام مقامی سٹیک ہولڈرز جو پارٹی کو منظم اور مزید فعال بنانے کی صلاحیت رکھتے ہیں وہ خواہشمند امیدواروں سے درخواستیں وصول کر سکتے ہیں ٹکٹوں کا فیصلہ باہمی مشاورت سے کیا جائے گا ہم انشاءا للہ ہر حلقہ سے اپنے امیدوار کھڑے کریں گے اور (ن) لیگ کا ڈٹ کر مقابلہ کیا جائے گا پارٹی میں مثبت سوچ کے ساتھ آگے بڑھنے والوں کومیں جائز مقام دیا جائے گا انتشار اور بلا جواز اختلافات کو ختم کر کے ہمیں آگے بڑھنا ہے،ان خیالات کا اظہار انہوں نے بلدیاتی الیکشن کے حوالے سے منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اجلاس میں ضلعی آرگنائزر چوہدری طاہر انور واہلہ اور سابق ٹکٹ ہولڈرز بھی موجود تھے اسحاق خاں خاکوانی نے کہا کہ جن بلدیاتی حلقوں میں دو یا دو سے زیادہ امیدوا ر وں کی درخواستیں وصول ہونگی انکا فیصلہ ضلعی ایپیلنٹ اتھارٹی کرے گی حتمی امیدواروں کا فیصلہ متعلقہ وارڈز اور یونین کونسل میں اسکی مقبولیت،اہلیت اور قابلیت کو سامنے رکھ کر کیا جائے گا۔

محکمہ صحت کو کانوں کان خبر نہ ہوئی،ایف آئی اے اور اسسٹنٹ کمشنر کا جعلی مصالحہ جات بنانے والی چار فیکٹریوں پر چھاپہ

بورے والااپڈیٹس نیوز(چوہدری اصغر علی جاوید سے)محکمہ صحت کو کانوں کان خبر نہ ہوئی،ایف آئی اے اور اسسٹنٹ کمشنر کا جعلی مصالحہ جات بنانے والی چار فیکٹریوں پر چھاپہ،فیکٹریوں سے رجسٹرڈ اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کے ناموں سے تیار ہونے والے مصالحہ جات کی بڑی کھیپ برآمد،مصالحہ جات کی پیکنگ مشینری اور مصالحہ جات کے ڈبے قبضہ میں لے لیئے،فیکٹریوں کے مالکان فرار،حراست میں لیئے گئے فیکٹری مزدور چھوڑ دئیے،فیکٹریاں سیل،تفصیلات کے مطابق آج ایف آئی اے کی ٹیم نے اسسٹنٹ ڈائریکٹرزBUREWALA PHOTO 1-01092015 میاں خرم یوسف اور احمد رضوان کی قیادت میں اسسٹنٹ کمشنر سیف اللہ ساجد اور ڈی ایس پی ذوالفقار علی سندرانہ و پولیس کی بھاری نفری کے ہمراہ تین مختلف ٹیموں کی شکل میں مجاہد کالونی،کینال ویو ہاﺅسنگ سکیم،رضوان ٹاﺅن اور285ای بی میں اچانک چھاپے مار کر جعلی مصالحہ جات گلوکوذ ڈی،انر جائل،کسٹرڈ،چائے کی پتی،سیمسول کلر اور رجسٹرڈ برانڈ کی دیگر مختلف اشیاءتیار کرنے والی جعلی فیکٹریاں پکڑ لیں جہاں سے ٹرکوں کے حساب سے تیار شدہ جعلی مصالحہ جات کے ڈبے برآمد کر لیئے رضوان ٹاﺅن میں شمشاد بھٹی نامی شخص اے ایم فوڈز کے نام سے مجاہد کالونی میں سید اختر حسین شینل کے نام سے،کینال ویو ہاﺅسنگ سکیم سے ریاض احمد بھٹی پری زاد کے نام سے جبکہ 285ای بی میں محمد رفیق اور ذوالفقار بھٹی مختلف رجسٹرڈ برانڈ کے مصالحہ جات و دیگر اشیاءخوردونوش تیار کرکے ملک کے مختلف اضلاع میں سپلائی کرتے آ رہے تھے جس سے محکمہ صحت بالکل بے خبر تھا اور یہ کام گذشتہ کئی سالوں سے جاری تھا اسسٹنٹ ڈائریکٹر ایف آئی اے احمد رضوان نے بتایا کہ ہم نے خفیہ اطلاع ملنے پر یہ کامیاب چھاپے مارے ہیں برآمد ہونے والا سامان،ڈبے اور مشینری قبضہ میں لے لی ہے انکے خلاف کاپی رائٹ ایکٹ کے تحت کاروائی ہو گی جبکہ اسسٹنٹ کمشنر سیف اللہ ساجد کے مطابق ڈسٹرکٹ سینٹری انسپکٹر کے ذریعہ جعلی مصالحہ جات کے نمونے لے کر انکے خلاف کاروائی کی جائے گی اور فیکٹریاں سیل کر دی گئی ہیں۔

جعلی مصالحہ جات بنانے والی فیکٹری میں گھریلو کنکشن پر کمرشل بجلی استعمال کرنے پر واپڈا کی بھی کاروائی

بورے والااپڈیٹس نیوز(چوہدری اصغر علی جاوید سے)جعلی مصالحہ جات بنانے والی فیکٹری میں گھریلو کنکشن پر کمرشل بجلی استعمال کرنے پر واپڈا کی بھی کاروائی،کنکشن منقطع،میٹر اُتار لیا گیا،تفصیلات کے مطابق آج جب ایف آئی اے اور اسسٹنٹ کمشنر بورے والا BUREWALA PHOTO 2-01092015سیف اللہ ساجد نے مجاہد کالونی میں سید اختر حسین کی جعلی مصالحہ جات بنانے والی فیکٹری پر چھاپہ مارا تو واپڈا کی ٹیم ایس ڈی او چوہدری شاہد اقبال جٹ کی قیادت میں وہاں پہنچ گئی جس نے اس فیکٹری میں گھریلو میٹر پر کمرشل بجلی استعمال کرنے پر فوری طور پر اُسکا کنکشن منقطع کرکے میٹر اُتار لیا۔

Burewala's First Online News Website

Follow

Get every new post delivered to your Inbox.

Join 85 other followers